Massive Electricity Load-shedding Fails Amendments Of NAPRA

napra

نیپرا قوانین کی خلاف ورزی کراچی میں طویل ترین غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ

ملک کے اہم ترین اور حساس شعبوں میں کراچی الیکٹرک سپلائی کا شمار بھی ہوتا ہے جسے جمہوریت کے علمبردار کمیشن خور عناصر نے غیر ملکی ادارے کو سونپ رکھا ہے،جیسا کہ پاکستان کے معاشی حب کراچی میں بجلی پیداوار اور ترسیل کا نظام الابراج گروپ کے ذیلی ادارے کے الیکٹرک کے سپرد ہے،وفاقی وصوبائی حکومت میں اثرورسوخ رکھنے والی اس کمپنی کی جڑیں پاکستان کی سیاسی جماعتوں تک پھیلی ہوئی ہیں،ان کمپنیوں کے زیر اثر مختلف ناموں میںمسلم لیگ ن کے خواجہ آصف اور پاکستان پیپلزپارٹی کی رہنما فریال تالپور کا نام سرفہرست لیا جاتا ہے ،یہی وجہ ہے کہ کراچی کے شہری بجلی کی طویل ترین غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے باوجود اضافی بلوں کی ادائیگی پر مجبور ہیں،بجلی کی پیداوار اور ترسیل پر مامور اس کمپنی نے کراچی کے مختلف علاقوں میں8 سے12 گھنٹوں کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ شروع کررکھاہے، نیپرا قوانین کی خلاف ورزی کرنے والی” کے ای ” انتظامیہ کو متعلقہ سرکاری اداروں کی جانب سے کھلی چھوٹ حاصل ہے جبہی اس کے خلاف آج تک قانونی چارہ جوئی نہیں کی گئی جبکہ دوسری جانب سیاسی اورمذہبی جماعتوں کا کردار انتہائی تعجب خیز ہے جو ہمیشہ کی طرح اس مرتبہ بھی بیانات اور معمولی نوعیت کے احتجاج تک محدودہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.