Indian Intelligence Agency RAW Accept MQM as a Wing Member

raw mqm

بھارتی خفیہ دہشت گردی ایجنسی ” را” نے ایم کیوا یم کو اپنا ذیلی ونگ بنا لیا


سید منور علی پیرزادہ

بھارتی خفیہ ایجنسی” را” نے ایم کیو ایم کو اپنا ذیلی ونگ بنالیا،جو پاکستان، لندن ،امریکا،ساوتھ افریقہ ،برطانیہ،بلجیم،،جرمنی،بنکاک،دبئی،سعودیا،بھارت ،سٹریلیا ،تھائی لینڈ،کینیڈا،ملیشیاءنیوزی لینڈ اورکینیاسمیت دیگر ممالک میں پاکستان کے خلاف مختلف انداز میں اپنی تخریبی کارروائیاں جاری رکھے ہوئے ہے،جنہیں لندن سے الطاف حسین اور امریکا سے ندیم نصرت کے ذریعے چلایا جارہا ہے،ایم کیو ایم کے یہ دونوں رہنما بظاہر ایک دوسرے سے جدا ہوچکے لیکن درحقیقت یہ بھارتی خفیہ ایجنسی را کی ایک منظم سازش ہے اور اس مقصد کے لیے 1200 پاونڈ ماہوار پر لندن میں عارف وجاکیانامی شخص کو یہ ذمہ داری سونپی گئی ہے کہ وہ سوشل میڈیا کے ذریعے یہ تاثر قائم کرے کہ الطاف حسین اور ندیم نصرت کے درمیان شدید اختلافات ہیں، اس طرح الطاف حسین لندن سے ایم کیو ایم کی نمائندگی جاری رکھتے ہوئے پاکستان دشمن سرگرمیوں میں کردار ادا کررہے ہیں تو دوسری جانب ندیم نصرت، بابر غوری اور واسع جلیل امریکا سے کراچی فری مہم چلارہے ہیں ،بھارتی خفیہ ادارے “را” کا یہ ذیلی ونگ جو کہ برسوں تک کراچی کی سڑکوں پر خون کی ہولی کھیلتا رہا اور جب قانون نافذ کرنے والے اداروں نے ان دہشت گردوں کا آپریشن کرکے ان کی جڑیں کاٹنا شروع کیں تو اب یہ بین الاقوامی سطح پر یہ ظاہر کرنے کی کوشش میں مصروف ہیں کہ پاکستان میں جمہوریت کا استحصال ہورہا ہے اسی لیے اردو بولنے والوں پر مظالم ہورہے ہیں حالانکہ اس دہشت گرد تنظیم کے ذریعے را نے پاکستان میں اپنا منظم نیٹ ورک قائم کررکھا ہے جن میں سلیپر سیل اور پیشہ ور جرائم پیشہ عناصر کو دہشت گردی کے لیے استعمال کیا جاتا ہے دراصل پاکستان دشمن عناصر سی پیک منصوبے سے انتہائی نالاں ہیں جبہی پاکستا ن میں عدم استحکام کا ماحول قائم رکھنا چاہتے ہیں تاکہ بین الاقوامی سطح پر یہ باور کرایا جاسکے کہ ریاستی ادارے اپنی عوام کو تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہیں تو پھر اپنی ایٹمی تنصیبات کا تحفظ کس طرح کرسکیں گے ،اس مذموم مقصد کی خاطر کراچی سمیت ملک بھر میں قائم امن وامان کی صورتحال کو تباہ کرنے کے لیے مختلف محاذ کھول رکھے ہیں جس میں ٹی ٹی پی اور بلوچستان علیحدگی پسند تحریک بھی نمایاں کردار ادا کررہی ہیں،اس وقت بھارتی خفیہ ایجنسی را نے ایم کیوا یم میں اپنے تربیتی یافتہ دہشت گردوں کا ایک مرکز ساوتھ افریقہ میں بھی قائم کررکھا ہے ، جہاںسے مختلف ممالک کے دہشت گردوں کا آپسی رابطے قائم کرایا جاتاہے،یہ تمام رابطے بھارتی ایجنسی را کے تربیتی یافتہ ایم کیوا یم کے دہشت گرد کراتے ہیں، جن میں ایک نام محمود صدیقی کا بھی ہے جو کراچی میں اے پی ایم ایس او کا ذمہ دار تھا اب بھارت میں را کے ساتھ کام کررہا ہے ،اس طرح جاوید لنگڑا گروہ کے کارندے بھی بھارت میں موجود ہیں،جن کے ذریعے پاکستان ،ساوتھ افریقہ سمیت مختلف ممالک میں دہشت گردوں سے رابطے کیے جاتے ہیں کیونکہ ساوتھ افریقہ میں کرپشن اور لاقانونیت کا راج ہے،جبہی کراچی سے فرار ہونے والے ایم کیو ایم کے کارندے عرصہ دراز سے وہاں مقیم ہیں، جنہوں نے ساوتھ افریقہ منتقل ہونے کے بعد وہاں پہلے سے آباد کراچی کے مختلف کاروباری افراد کو ڈرا دھمکا کر ان کے کاروبار پر قبضہ کیا بعد میں مقامی خواتین سے شادیاں رچا ئیں جبکہ دیگر طریقوں سے ساوتھ افریقہ کی شہریت بھی حاصل کررکھی ہے ،اب اس گروہ کے کارندے ساوتھ افریقہ کے پاسپورٹ پر مختلف ممالک کا سفر کرتے ہیں حالانکہ یہ بھی اطلاع ہے کہ پاکستان میں دہشت گردی کرنے والے اس گروہ کے بیشتر کارندوں نے جعلسازی سے ساوتھ افریقین پاسپورٹ حاصل کر رکھے ہیں، ساوتھ افریقہ میں منظم یہ گروہ براہ راست” را” کے لیے کام کررہا ہے جنہوں نے کراچی کے جرائم پیشہ عناصر اور ایم کیو ایم کے کارندوں سے خفیہ رابطے قائم کررکھے ہیں ،جنہیں کراچی میں دہشت گردی کی مختلف وارداتوں اور مخالف سیاسی جماعتوں کے کارکنوں کی ٹارگیٹ کلنگ کے لیے استعمال کیا جاتا ہے،ذرائع کے مطابق ساوتھ افریقہ میں را کا ایم کیو ایم ونگ انتہائی فعال ہے ،جو اپنے منحرف کارندوں کو خود ہلاک کررہا ہے ،جس میں ایک نام مجید منجلا کا بھی ہے جسے جنوبی افریقہ کے شہر جوہانسبرگ میں نامعلوم افراد نے گولی مار کرہلاک کیا ،جس سے متعلق کہا جارہا ہے کہ اس نے 2013ءکے الیکشن میں کراچی کے مختلف علاقوں میں دھماکے کرائے ، جس میں مختلف سیاسی جماعتوں کے کارکن ہلاک ہوئے تھے تاہم بعد میں اس نے ایم کیو ایم سے علیحدگی اختیار کرکے ساوتھ افریقہ میں شادی کرکے وہاں اپنا کاروبار شروع کیا جہاں کراچی سے فرار ہوکر آنے والے لڑکوں کو اس یقین دہانی پر ملازمت فراہم کرتا تھا کہ وہ آئندہ ایم کیوا یم سے تعلق نہیں رکھیں گے، جس کے بعد ایم کیوایم را نے اسے ہلاک کیا،اسی طرح بدنام زمانہ دہشت گرد قمر ٹیڈی سمیت ایک درجن سے زائد ایم کیو ایم کے کارندے نامعلوم افراد کے ہاتھو ں مارے جاچکے ہیں ، ذرائع کے مطابق اس وقت بھی ساو تھ افریقہ جوہانسبرگ میں عباس عرف بوبی مقیم ہیں، جو کراچی نارتھ ناظم آباد سے ایم کیوا یم کے لیے کام کرتے تھے ماضی میں ان کا تعلق فہیم کمانڈوں گروپ سے رہا ہے فی الحال ساوتھ افریقہ میں سیکورٹی کمپنی چلارہے ہیں،ان کے علاوہ شاہ فیصل سپیئر سائنس کالج میں اے پی ایم ایس او کے ذمہ دار رہنے والے انیس الحسن اس وقت ساوتھ افریقہ میں مختلف کاروبار کررہے ہیں جبکہ رضوان الدین عرف راجو ، ندیم شیخ عرف شرابی کے مختلف اوقات میں لندن سے ساوتھ افریقہ میں چکر لگتے رہتے ہیں جہاں مختلف گروہوں سے ملاقاتیں کی جاتی ہیں،اس کے علاوہ وسیم کارگو،آصف ویڈیو والا،ہاشم اعظم،سہیل خانزادہ عرف ڈکیت ،احمد امام لندن سے ہی تمام معاملات کو آپریٹ کررہے ہیں جن سے متعلق انکشاف ہوا ہے کہ یہ افراد لندن میں نقاب پہن کر پاکستانی پرچم جلانے میں شامل تھے جبکہ لندن میں موجود غلام نبی عامر اندرون خانہ اسی گروہ کا حصہ ہیں اور بظاہر پاکستان کی ایک سیاسی جماعت میں شامل ہوکر خود کو محفوظ کیے ہوئے ہیں ،ذرائع سے حاصل اس معلومات میں یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ لندن ،یورپ اور ساوتھ افریقہ میں موجود اس نیٹ ورک کے اکثر کارندے بھارتی خفیہ ادارے را سے تربیت شدہ ہیں،،ذرائع کاکہنا ہے کہ” را”نے ساوتھ افریقہ میں اپنا سیٹ اپ بڑھانے کے لے نئے چہرے بھجوانے شروع کردیے ہیں جبکہ پہلے سے موجود متعددکارندوں کو مختلف ممالک میں ذمہ داریاں سونپی جارہی ہیں۔

Pakistan News

Rizwan udden urf Rajo son of Kamal u deen He’s the master mind Of Pakistan flag burning in London

arrested Nadeem mqm

انیس الحسن۔قمر ٹیڈی۔سلیم شہزاد
anees mqm
بابو
mqm altaf hussain
ندیم شیخ عرف شرابی۔وسیم کارگو۔آصف ویڈیو والا۔ہاشم اعظم۔سہیل خانزادہ عرف ڈکیت ۔احمد امام و دیگ

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.