کمسن لڑکی اپنی سہیلی کو ساتھ لے کر بوائے فرینڈ کے ساتھ پکنک منانے گئی ، پھر وہاں جو ہوا ، انھوں نے کبھی خواب میں بھی نہ سوچا ہوگا

بھارت کے شہر رانچی کی رہنے والی دو لڑکیوں کو انکے بوائے فرینڈز نے پکنک کے بہانے بلا کر جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا ۔ تفصیلات کے مطابق 2 جنوری کو جگن ناتھ پور کے پولیس سٹیشن میں 13 سالہ لڑکی کے اہل خانہ شکایت درج کروانے پہنچے جس میں انہوں نے الزام عائد کیا کہ ان کی بیٹی کی 16 سالہ دوست نے اسے انسانی سمگلنگ کیلئے اغواء کر لیا ہے ۔ لیکن جب لڑکیاں ایک ہفتے کے بعد واپس گھر پہنچیں تو انہوں نے ایسی کہانی بیان کر دی کہ ہر کسی کے پیروں تلے زمین ہی نکل گئی ۔
جگن ناتھ پولیس سٹیشن کے انچارج انوپ کامکر نے کہا ہے کہ دونوں لڑکیوں نے دو جنوری کو اپنے بوائے فرینڈز کے ساتھ ملاقات کی اور گھر سے پکنک کیلئے گئی تھیں ۔ لیکن ان کے بوائے فرینڈز نے انہیں قید کر لیا اور جنسی زیادتی کا نشانہ بناتے رہے ، لڑکوں نے انہیں ’تتی سلوائی ‘ پولیس سٹیشن کی حدود میں قید کر رکھا تھا ۔
رورل سپریٹنڈنٹ آف پولیس اشتوش شیکھر نے کہا ہے کہ ملزمان کیخلاف کارروائی شروع کر دی گئی ہے اور مقدمہ درج کیا جارہا ہے جبکہ لڑکیوں کا بیان بھی ریکارڈ کر لیا گیا ہے ۔ پولیس کا کہناتھا کہ ایک ملزم جس کا نام بادل ہے ، اس کا تعلق تتی سلوائی سے ہے اور اس نے اپنی 16 سالہ محبوبہ کو پکنک پر جانے کیلئے بلایا لیکن وہ اپنی سہیلی کو بھی ساتھ لے گئی ۔ لیکن بادل اور اس کے دوست منیش نے دونوں کو قید کر لیا اور ایک ہفتے تک باری باری جنسی زیادتی کا نشانہ بناتے رہے ۔
The post کمسن لڑکی اپنی سہیلی کو ساتھ لے کر بوائے فرینڈ کے ساتھ پکنک منانے گئی ، پھر وہاں جو ہوا ، انھوں نے کبھی خواب میں بھی نہ سوچا ہوگا appeared first on Urdu News.