سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت کے پاس کوئی پلان نہیں ہے ، مسلم لیگ ن نے بھی پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں لئے گئے قرضے واپس کرنے کیلئے قرض لیا تھا ، حکومت کو دوست ممالک سے جوملا سب نے دیکھ لیا ، ملک اس طرح سے نہیں چلتے ۔ ایک نجی نیوز چینل کے پر وگرام میں اسحاق ڈار نے کہا کہ آئی ایم ایف سے ہمارا لین دین رہا ہے لیکن کسی پاکستانی حکومت کو آئی ایم ایف کے ساتھ پروگرام فائنل کرنے میں اتنا عرصہ نہیں لگا جتنا موجودہ حکومت کو عرصہ لگ رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اتنا وقت تو مشرف حکومت نے بھی نہیں لیا تھا ۔
انہوں نے کہا کہ حکومت نے آئی ایم ایف میں جانے کیلئے بہت سے دن ضائع کئے ہیں ، آئی ایم ایف کے ساتھ پروگرام جنوری میں کیوں جارہا ہے ؟ انہوں نے کا کہ جب مسلم لیگ ن نے حکومت سنبھالی تو اس وقت ہماری تیاری تھی اور ہم نے اپنے مقاصد جو حاصل کرنے تھے ، ان کا اعلان کردیا تھا ، پہلی بار ہماری حکومت نے آئی ایم ایف کے ساتھ پروگرام مکمل کیا تھا ، ہم نے بھی پیپلز پارٹی کے دور میں قرضے واپس کرنے کیلئے قرض لیا تھا ۔
انہوں نے کہا کہ حکومت کی تیاری ہونی چاہئے تھی کہ پیسے کہاں سے لینا ہیں ، حکومت کودوست ممالک سے جو ملا ہے وہ سب نے دیکھ لیا ہے ، ملک اس طرح سے نہیں چلتے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو آئی ایم ایف کو جانے نہیں دینا چاہئے تھا بلکہ اپنا پروگرام فائنل کرنا چاہئے تھا ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے پاس کوئی پلان نہیں ہے ، اقتدار میں آتے ہی رونا شروع کردیا ، ایسے ماحول میں کوئی سرمایہ کاری کیسے کرے گا ؟
The post پی ٹی آئی کی حکومت نے آئی ایم ایف کے پاس جانے سے پہلے کیا غلطی کی ، اسحاق ڈار نے نشاندھی کردی appeared first on Urdu News.