لاہور (اُردو نیوز) قطری شہزادے تلور کے شکارکے لیے صحرائے تھل پہنچ گئے جہاں ان کے لئے خیمہ بستی بھی قائم کردی گئی ہے،مزید 2 شہزادوں کی آئندہ ہفتے آمد متوقع ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق صحرائے تھل کے علاقے کاتی مار اور ماہنی کے قریب قطری شہزادوں کے لیے خیمے قائم کیے گئے ہیں جس کے اطراف خاردار تاروں کے علاوہ ربڑ اور دھاتی چادروں سے 3 دیواریں بنائی گئی ہیں۔
شہزادہ محمد احمد اپنے ساتھیوں کے ہمراہ بھکر پہنچے ہیں جبکہ مزید 2 شہزادوں کی آئندہ ہفتے آمد متوقع ہے۔ڈسٹرکٹ وائلڈ لائف آفیسر شاہد نواز کا کہنا ہے کہ قطری شہزادوں کو شکار کے لیے حکومت اجازت نامہ جاری کرتی ہے اور تلور کا شکار کرنے کی اجازت کے لیے قطری مہمان مقررہ فیس ایک لاکھ ڈالر ادا کرتے ہیں جبکہ شکار میں استعمال فالکن کی فیس بھی 100 ڈالر فی پرندہ الگ سے جمع کرائی گئی ہے۔وائلڈ لائف افسر کے مطابق قطری شکاریوں کو 100 تلور کے شکار کا اجازت نامہ جاری کیا گیا ہے اور انہیں مقررہ تعداد سے زائد تلور شکار کرنے کی اجازت نہیں۔
The post پاکستان میں ’قطری مہمان‘ شکار کرنے اور فالکن کی فیس فی پرندہ کتنی ادا کرتے ہیں؟ اعدادوشمار جاری appeared first on Urdu News.