وفاقی حکومت نے کرپٹ عناصر کی نشاندہی کے نئے قانون ’’ وسل بلور ‘‘ پر آرڈیننس لانے کا فیصلہ کرلیا

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں وزیراعظم کے معاون خصوصی شہزاد اکبر نے بھی بریفنگ دی ، کابینہ نے کرپٹ عناصر کی نشاندہی کے نئے قانون وسل بلور پر آرڈیننس لانے کا فیصلہ کیا ہے ، آرڈیننس کو موجودہ نیب اور ایف آئی اے کے قوانین سے ہم آہنگ کیا جائے گا ، کرپٹ عناصر کی نشاندہی کرنے والے کو قانونی تحفظ حاصل ہوگا ، کرپشن کی نشاندہی اور غیر قانونی اکاؤنٹس سے حاصل رقوم کا 20 فی صد ملے گا ۔
کابینہ نے عطیہ کی جانے والی گاڑیوں کے لیے انکم ٹیکس اور سیلز کے آئی آر او میں چھوٹ کی سمری کی منظوری دی ۔ وفاقی کابینہ کے اجلاس میں یوریا کھاد درآمد کے لیے پیپرا رولز 35 میں نرمی کی سمری پر بھی غور کیا گیا جب کہ عطیہ کی جانے والی گاڑیوں کے لیے انکم ٹیکس اور سیلز کے آئی آر او میں چھوٹ کی سمری بھی پیش کی گئی ۔ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے شروع کی گئی ہاؤسنگ اسکیم کے حوالے سے فواد چوہدری نے بتایا کہ سرکار کی زمین کولیٹرل ہوگی ، بینک قرضہ دے گا ، جس پر لوگ گھر بنائیں گے ۔
The post وفاقی حکومت نے کرپٹ عناصر کی نشاندہی کے نئے قانون ’’ وسل بلور ‘‘ پر آرڈیننس لانے کا فیصلہ کرلیا appeared first on Urdu News.