واٹس ایپ استعمال کرنے والے اب ہو جائیں ہوشیار ، ایسی کچھ باتیں جن کی وجہ سے واٹس ایپ صارفین کو پابندی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے ۔ ایک رپورٹ کے مطابق واٹس ایپ پر افواہیں پھیلانا ، نفرت انگیز پیغامات بھیجنا ، غیرقانونی سرگرمیوں سے متعلق پیغامات ، کسی کی توہین پر مبنی پیغامات اور کسی کو دھمکی آمیز پیغامات بھیجنے پر واٹس ایپ کسی صارف کو بین کر سکتا ہے ۔ اس کے علاوہ جعلی واٹس ایپ اکاﺅنٹ بنانا ، ایسے لوگوں کو بہت زیادہ پیغامات بھیجنا جو آپ کی کنٹیکٹ لسٹ میں شامل نہیں ہیں ۔
اس کے علاوہ ایپلی کیشن کے کلیدی کوڈ تبدیل کرنے کی کوشش کرنا ، واٹس ایپ کے ذریعے وائرس پر مبنی فائلز بھیجنے کی کوشش کرنا ، واٹس ایپ کے سرورز ہیک کرنے کی کوشش کرنا ، کسی دوسرے کے فون کی جاسوسی کرنے کی کوشش کرنا اور واٹس ایپ پلس جیسی تھرڈ پارٹی ایپلی کیشنز استعمال کرنا بھی ایسی حرکتیں ہیں جن کی وجہ سے واٹس ایپ کسی کو بین کر سکتا ہے ۔ اگر بہت زیادہ صارفین آپ کے بھیجے ہوئے پیغامات کو یا آپ کے اکاﺅنٹ کو رپورٹ کریں تو بھی آپ پر پابندی عائد ہو سکتی ہے ۔
ایک ویب سائٹ gadgetsnow.com کے مطابق بھارتی تیلگو ڈیسام پارٹی کے ٹکٹ پر رکن پارلیمنٹ منتخب ہونے والے سی ایم رامیش کا کہنا ہے کہ ”میں نے واٹس ایپ کے قواعدوضوابط کی کوئی خلاف ورزی نہیں کی اس کے باوجود کمپنی کی طرف سے مجھے بین کر دیا گیا ہے۔ “ تاحال واٹس ایپ کی طرف سے اس معاملے پر کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ۔
The post واٹس ایپ استعمال کرنے والے اب ہو جائیں ہوشیار ، اگر آپ نے ان باتوں کا خیال نہ کیا تو واٹس ایپ آپ کو بلیک لسٹ بھی کرسکتا ہے appeared first on Urdu News.