کرائسٹ چرچ (ویب ڈیسک ) نیوزی لینڈ کی دو مساجد میں نماز جمعہ کی ادائیگی کے وقت حملہ آوروں نے فائرنگ کر دی جس کے باعث مجموعی طور پر 9 افراد شہید ہو گئے ہیں جبکہ سیریز کیلئے وہاں موجود بنگلہ دیشی ٹیم محفوظ رہی ہے ۔نیوزی لینڈ کے النور اور لین ووڈ مساجد میں فائرنگ کی گئی جبکہ بنگلہ دیش کی کرکٹ ٹیم النور مسجد میں نماز جمعہ کیلئے موجود تھی ۔نیوزی لینڈ کے میڈیا کے مطابق حملہ آور نے فوجی وردی پہن رکھی ہے اور اس کی عمر 28 سال ہے جبکہ وہ آسٹریلیا کا شہری ہے جبکہ دوسرے دہشتگرد نے چہرے پر ہیلمٹ پہن رکھا ہے ۔دہشتگرد حملے کی فوٹیج براہ راست سوشل میڈیا پر نشر کر رہے تھے ۔نیوزی لینڈ کی پولیس نے ایک ملزم کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ حملے میں مزید افراد کے ملوث ہونے کے شبہ کا اظہار کیا جارہاہے ۔دوسری جانب النور مسجد میں بنگلہ دیش کی ٹیم نماز جمعہ کیلئے موجود تھی کہ عین موقع پر فائرنگ ہو گئی تاہم تمام کھلاڑی محفوظ رہے ہیں اور انہیں محفوظ مقام پر منتقل کر دیا گیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق غر ملکی مڈییا کے مطابق کرائسٹ چرچ مںص مقامی وقت کے مطابق تقریباً ایک بجکر 40 منٹ پر مسلح شخص نے مسجد مںم داخل ہوتے ہی اندھا دھند فائرنگ کی اور اس کی لائوا ویڈیو بھی بناتا رہا۔مسجد مںت نماز ظہر کی ادائیسج کے لئے لوگ جمع تھے اور کرائسٹ چرچ مںٹ موجود بنگلادییچ کرکٹ ٹما کے کھلاڑی بھی نماز کی ادائیگص کے لےر مسجد مںچ تھے تاہم وہ فائرنگ سے بال بال بچ گئے۔
مقامی مڈےیا کے مطابق فائرنگ کا واقعہ ہیگلے پارک کے قریب ڈین ایونو کی مسجد مںل پشی آیا جب کہ اسی علاقے کی ایک اور مسجد مںو بھی فائرنگ کی اطلاعات ہںل۔پولس نے حملہ آور کو حراست مںئ لتےق ہوئے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا جب کہ شہریوں سے اپلم کی ہے کہ وہ ڈین ایونوٹ جانے سے گریز کریں۔دوسری جانب کرائسٹ چرچ اسپتال کے ترجمان نے سی این این کو بتایا کہ اسپتال مںخ کئی افراد کی لاشوں کو لایا گاا ہے تاہم انہوں نے تعداد بتانے سے گریز کاا جب کہ بعض مڈلیا رپورٹس کے مطابق واقعے مںق 30 افراد جاں بحق ہوئے۔موہن ابن ابراہمو نامی عیخل شاہد کے مطابق وہ فائرنگ کے وقت مسجد مںٹ ہی موجود تھے اور تقریباً 200 کے قریب لوگ نماز کی ادائیےئ کے لےں موجود تھے، حملہ آور مسجد کے عقبی دروازے سے داخل ہوا اور کافی دیر تک فائرنگ کرتا رہا۔عیے، شاہد نے کہا کہ اس کا دوست علاقے کی دوسری مسجد مںا موجود تھا جس نے اسے فون کر کے بتایا کہ جس مسجد مںو وہ ہے وہاں بھی ایک مسلح شخص نے اندھا دھند فائرنگ کی اور 30 لوگ جاں بحق ہوچکے ہںا۔ تاہم انہوں نے تعداد بتانے سے گریز کات جب کہ بعض مڈایا رپورٹس کے مطابق واقعے مںی 30 افراد جاں بحق ہوئے۔موہن ابن ابراہمئ نامی عیات شاہد کے مطابق وہ فائرنگ کے وقت مسجد مںں ہی موجود تھے اور تقریباً 200 کے قریب لوگ نماز کی ادائیگک کے لےف موجود تھے، حملہ آور مسجد کے عقبی دروازے سے داخل ہوا اور کافی دیر تک فائرنگ کرتا رہا۔عیان شاہد نے کہا کہ اس کا دوست علاقے کی دوسری مسجد مںا موجود تھا جس نے اسے فون کر کے بتایا کہ جس مسجد مںض وہ ہے وہاں بھی ایک مسلح شخص نے اندھا دھند فائرنگ کی اور 30 لوگ جاں بحق ہوچکے ہںض۔
The post نیوزی لینڈ : بنگلا دیشی کرکٹ ٹیم پر حملہ کرنے والے دہشتگرد کا تعلق کس ملک سے ہے؟ ناقابل یقین خبر نے پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا appeared first on Urdu News.