اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)قطرے شہزادوں کی عیاشیاں ۔۔۔شکار کے نام پر کیا کام کیا جا رہا ہے؟ایسا شرمناک انکشاف سامنے آگیا کہ پاکستانی آگ بگولا ہو جائیں گے ۔۔ قطری شہزادے تلور کا شکار کرنے کے لیے پاکستان پہنچ گئے۔ تفصیلات کے مطابق قطری شہزادے تلور کے شکار کے لیے ماہنی تھل پہنچ گئے ۔ قطری وفد میں شہزادہ شیخ محمد بن خلیفہ سمیت 10 افراد موجود ہیں۔ صحرائے تھل کے علاقوں کاتی مار اور ماہنی کے قریب ان کے لیے ایک خیمہ بستی بھی قائم کر دی گئی ہے۔ قطری شہزادوں کے ماہنی تھل پہنچنے پر مقامی کسانوں نے احتجاج شروع کر دیا ہے۔
کسانوں کا کہنا ہے کہ قطری شہزادوں کی آمد سے ہماری فصلیں خراب ہوتی ہیں۔ ان کی گاڑیاں ہماری فصلوں کو نقصان پہنچاتی ہیں اور ہمارا جو نقصان ہوتا ہے اُس کا ازالہ بھی نہیں کیا جاتا۔ واضح رہے کہ قطری شہزادے ہر سال تلور کے شکار کے لیے صحرائے تھل کا رخ کرتے ہیں جہاں وہ چند روز قیام کے بعد واپس روانہ ہوجاتے ہیں۔ دوسری جانب ڈسٹرکٹ وائلڈ لائف آفیسر شاہد نواز کا کہنا ہے کہ قطری شہزادوں کو شکار کے لیے حکومت اجازت نامہ جاری کرتی ہے اور تلور کا شکار کرنے کی اجازت کے لیے قطری مہمان مقررہ فیس ایک لاکھ ڈالر ادا کرتے ہیں۔
جب کہ شکار میں استعمال فالکن کی فیس بھی 100 ڈالر فی پرندہ الگ سے جمع کروائی گئی ہے۔ وائلڈ لائف افسر کے مطابق قطری شکاریوں کو 100 تلور کے شکار کا اجازت نامہ جاری کیا گیا اور انہیں مقررہ تعداد سے زائد تلور شکار کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ یاد رہے کہ قطری شہزادوں پر تلور کا شکار کرنے پر پابندی عائد تھی لیکن پاکستان تحریک انصاف کی حکومت بھی قطری شہزادوں کے رعب و دبدبے کے آگے ڈھیر ہوگئی اور قطری شہزادوں کو نایاب پرندے تلور کے شکار کی اجازت دے دی گئی۔قطری شہزادے شیخ فیصل نے تلور کے شکار کے لیے درخواست دی تھی جسے وزارت داخلہ نے ضروری ہدایات کے ساتھ بلوچستان حکومت کو بھجوادیا تھا۔
The post قطرے شہزادوں کی عیاشیاں ۔۔۔شکار کے نام پر کیا کام کیا جا رہا ہے؟ایسا شرمناک انکشاف سامنے آگیا کہ پاکستانی آگ بگولا ہو جائیں گے appeared first on Urdu News.