کراچی(نیوز ڈیسک ) ایم کیو ایم پاکستان کی رابطہ کمیٹی نے سینئر رہنماء فاروق ستار کا استعفیٰ منظور کرلیا ہے، رابطہ کمیٹی نے فاروق ستارکو شوکاز نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے، جس پرفاروق ستار سے مختلف معاملات پر جواب طلب کیا جائے گا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق فاروق سات کے الزامات اور پارٹی سے متعلق معاملات پر ایم کیو ایم پاکستان کی رابطہ کمیٹی کا اجلاس ہوا۔اجلاس میں رابطہ کمیٹی نے فاروق ستارکا رابطہ کمیٹی کی رکنیت سے دیا جانے والا استعفیٰ منظور کرلیا ہے۔
ایم کیوایم نے فاروق ستار کو شوکاز نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔ واضح رہے فاروق ستار نے انتخابات کے باعث ایم کیوایم کی موجودہ قیادت سے تحفظات کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے ایم کیو ایم نظریاتی بنانے کا اعلان بھی کررکھا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ فاروق ستار نے ایم کیوایم نظریاتی کا دس نکاتی چارٹرڈ تیار کرلیا ہے۔دوسری جانب ایم کیوایم رہنما فاروق ستارنے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان اپنے گھوڑے کو قابو کریں گھوڑا بگڑ گیا ہے۔
ایم کیو ایم ضمنی نشستوں پر بھی ہار گئی،عامر خان اورکنور نوید میری بات مانتے تو ایسا نہیں ہوتا۔ منگل تیئس اکتوبرکو انسداد دہشت گردی عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے ایم کیو ایم رہنما فاروق ستارنے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان گھوڑے کو قابو کریں گھوڑا بگڑ گیا ہے، انہوں نے کہا کہ گھوڑے نے اپنے ہی سوار کو اچھال دیا تو سوار پر گھوڑا سوار ہوگا۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو سیاسی بحران سے نمٹنے کے لیے اقدامات کرنے چاہئیں، ان کی حد سے زیادہ خود اعتمادی کے سبب اقدامات گلے پڑ رہے ہیں۔ حکومت نے گیس، تیل، بجلی کے نرخوں میں اضافہ کردیا ہے جبکہ غریب لوگوں کو ریلیف ملنا چاہیے۔
فاروق ستار نے کہا کہ معیشت کی بحالی کاخواب شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکے گا۔ میں وزیر اعظم عمران خان سے ملوں گا،انہیں سمجھانے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم ضمنی نشستوں پر بھی ہار گئی،عامر خان اورکنور نوید میری بات مانتے تو ایسا نہیں ہوتا۔ اے پی سی کے احتجاج میں مجھے روکا گیا تھا جبکہ کنور نوید نے خود اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ احتجاج میں نہ جاکر غلطی کی ہے، ہم بھی احتجاج میں جاتے تو اپنی نشست جیت جاتے۔اس کے علاوہ انہوں نے بتایا کہ کنور نوید نے تسلیم کیا ہے کہ ضمنی الیکشن میں ہمیں ہرایا گیا ہے۔ تاہم کہہ دینے سے کوئی رہنما نہیں بن جاتا۔
The post عہدے سے اچا نک چھٹی ، استعفیٰ منظور کر لیا گیا appeared first on Urdu News.