لاہور(ویب ڈیسک ) موجیں ہی موجیں: مزدوروں کے عالمی دن کے حوالے سے بڑا اعلان کر دیا گیا ۔لاہور ہائیکورٹ نے گھریلو ملازمین سے متعلق کیس کافیصلہ سنادیا،عدالت نے 15 سال سے کم عمرگھریلوملازمین نہ رکھنے کے قانون پراطلاق کاحکم دیدیااورگھریلوملازمین کے تحفظ کیلئے خصوصی عدالتیں بنانے کا حکم بھی دیدیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے گھریلو ملازمین سے متعلق کیس کافیصلہ سنادیا۔ عدالت نے 15 سال سے کم عمرگھریلوملازمین نہ رکھنے کے قانون پراطلاق کاحکم دیدیا۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے گھریلو ملازمین سے متعلق کیس کافیصلہ سنادیا،عدالت نے 15 سال سے کم عمرگھریلوملازمین نہ رکھنے کے قانون پراطلاق کاحکم دیدیااورگھریلوملازمین کے تحفظ کیلئے خصوصی عدالتیں بنانے کا حکم بھی دیدیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے گھریلو ملازمین سے متعلق کیس کافیصلہ سنادیا۔
عدالت نے 15 سال سے کم عمرگھریلوملازمین نہ رکھنے کے قانون پراطلاق کاحکم دیدیااورگھریلوملازمین کے تحفظ کیلئے خصوصی عدالتیں بنانے کا حکم بھی دیدیا۔عدالت نے 15 سے 18 سال تک کے ملازمین سے صرف 3 گھنٹے کام کرانے کا حکم دے دیا ہے،عدالت نے مزدوروں کے عالمی دن پر گھریلوملازموں کوچھٹی دینے کاحکم دیا ہے عدالت نے گھریلوملازمین کیلئے سوشل سیکیورٹی ادارہ بنانےکابھی حکم دیدیا۔ یاد رہے پاکستان سمیت دنیا بھر میں یکم مئی کو مزدوروں کا عالمی دن منایا جائے گا۔ ملک بھر میں عام تعطیل ہو گی ا س دن کی مناسبت سے ملک بھر میں جلسے جلوس اور ریلیاں منعقد ہونگی جبکہ مختلف تنظیمیں سیمینارز اور تقاریب منعقد کریں گی جس سے مزدور رہنمائوں کے علاوہ وفاقی وزراء اور اپوزیشن رہنما خطاب کریں گے۔ ملک بھر میں عام تعطیل ہو گیاور تمام سرکاری و غیر سرکاری ادارے، بینک اور دفاتر بند رہیں گے۔ مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پر مختلف مزدور تنظیمیں جلسے، جلوس، ریلیاں اور سیمینار منعقد کریں گی۔
یکم مئی مزدور ڈے جسے دنیا کے مزدور اپنی آسان زبان میں چھٹی کا دن بھی کہتے ہیں، کیونکہ مزدوروں کے لیے چھٹی کسی عید سے کم نہیں ہوتی۔لیکن اس عید کا مزہ بھی صرف وہ مزدور لے سکتے ہیں جو کسی کارخانے میں کام کرتے ہیں۔مزدور ڈے ہر سال 1 مئی کو بہت جوش و خروش کے ساتھ منایا جاتا ہے۔جوش و خروش کا لفظ اس لیے استعمال کیا گیا ہے کیونکہ اس دن مزدورڈے کے حوالے سے جتنی بھی تنظیمیں ہیں وہ بڑے جوش جذبہ کے ساتھ جلسے،جلوس اور تقاریر کر رہی ہوتی ہیں۔سوال یہ ہے کہ کیا ان تقاریر میں کیے گئے وعدوں پر عمل در آمد ہوتا ہے کہ نہیں۔اسکا جواب کیا ہے؟یہ ہم سب جانتے ہیں لیکن جانتے ہوئے بھی انجان بن کر زندگی گزار رہے ہیں۔ مزدوروں کے حق پر بات کرنے والی ہماری سیاسی و سماجی تنظیمیں یہ بھول جاتی ہیں کہ اس دن کو منانے کا مقصد کیا تھا اور اگر آج بھی ہم اس دن کو مناتے ہیں تو اس کا مقصد کیا ہونا چاہیے۔
The post عام تعطیل کااعلان appeared first on Urdu News.