شاہین ائیرلائن نے ہزاروں حاجیوں کی زندگیاں داؤ پر لگا دیں، کون سا طیارہ چلا رہے ہیں؟ افسوسناک خبر

لاہور (اردو نیوز) سول ایوی ایشن نے حج کے دوران حاجیوں کو سعودی عرب لے کر جانے اور واپس لانے کے لیے 4 ہواباز کمپنیوں کو اجازت دی. ان میں پی آئی اے، ائیر بلو، سعودی ائیرلائن اور شاہین ائیرلائن شامل تھے. واجبات کی ادائیگی نہ کرنے کی وجہ سے سول ایوی ایشن نے شاہین ائیر لائنز کا حج آپریشن روک دیا تھا.
ہزاروں زائرین نے شاہین ائیرلائن کے ٹکٹس لیے تھے. اس تعطل کی وجہ سے حجاج کرام سعودی عرب میں پھنس گئے تھے. جس وجہ سے سول ایوی ایشن نے شاہین ائیرلائن کو 31 ستمبر تک حج آپریشن مکمل کرنے کا ٹارگٹ دیا، لیکن ان کو اجازت صرف ایک جہاز چلانے کی دی گئی جس نے صرف حاجیوں کو وطن واپس لانا تھا.
شاہین ائیرلائن کی پرواز این ایل-704 مدینہ سے کراچی آئی تو اس میں 216 مسافر تھے. جبکہ اس میں گنجائش 325 مسافروں کی تھی. اس کے بعد بھی اب تک شاہین ائیرلائن کی ہر فلائٹ میں 250 افراد کو سوار کیا جارہا ہے، حالانکہ اس میں 75 مسافر مزید سفر کرسکتے ہیں. لیکن اتنے کم مسافروں کو کیوں لایا جارہا ہے؟
معتبر ذرائع سے معلوم ہوا کہ جس جہاز پر حجاج کرام کو وطن واپس لایا جارہا ہے، اس جہاز کا ایمرجنسی کا دروازہ خراب ہے. جس کی وجہ سے اس میں 75 یا زائد مسافر کم سوار کیے جاتے ہیں تاکہ کسی حادثے سے بچا جاسکے.
لیکن کیا اس فنی خرابی کے ساتھ جہاز چلانا صحیح ہے؟ کیا 250 مسافروں کی زندگیاں داؤ پر لگائی جا سکتی ہیں؟ مدینہ میں موجود حاجیوں کا اس بات پہ اسرار ہے کہ انہیں کسی دوسری فلائٹ سے وطن واپس پہنچایا جائے.
انہوں نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ ان کو محفوظ سفر فراہم کیا جائے. اب دیکھنا یہ ہے کہ کیا عمران خان کی ”نئی حکومت” ان حاجیوں کے لیے کیا کرتی ہے.؟
The post شاہین ائیرلائن نے ہزاروں حاجیوں کی زندگیاں داؤ پر لگا دیں، کون سا طیارہ چلا رہے ہیں؟ افسوسناک خبر appeared first on Urdu News.