نئی دہلی ( ویب ڈیسک )پاکستان نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرنے پر دشمن کے دو جہاز مار گرائے تھے جبکہ ایک بھارتی پائلٹ کو بھی اپنی حراست میں لیا تھا جسے وزیراعظم عمران خان کے جذبہ خیر سگالی کے حکم کے تحت بھارت واپس بھجوا دیا گیا ہے تاہم اس سب کے دوران ایک بھارتی خاتون کا ویڈیو بیان سوشل میڈیا پر وائر ل ہو تا رہا جسے ابھی نندن کی اہلیہ قرار دیا گیا تاہم اب اس کی اصل حقیقت سامنے آ گئی ہے ۔برطانوی ویب سائٹ ’’ ایکسپریس ‘‘ کی رپورٹ کے مطابق بھارتی خاتون اپنے ویڈیو پیغام میں بی جے پی کے سیاستدانوں سے ابھی نندن کے معاملے کو سیاسی مقاصد حاصل کرنے کیلئے استعمال نہ کرنے کی اپیل کرتی ہے جسے بھارت میں تیزی کے ساتھ سوشل میڈیا پر شیئر کیا گیا جسے اب تک دو لاکھ 39 ہزار لوگ دیکھ چکے ہیں جبکہ 14 ہزار سے زائد مرتبہ شیئر کیا جا چکا ہے ۔
یہ ویڈیو دراصل بھارتی آن لائن میگزین ” یوادیش “ کی جانب سے سوشل میڈیا پر ابھی نندن کی اہلیہ کا پیغام بنا کر شیئر کیا گیا جس کے بعد اس ویڈیو کو بھارتی پنجاب کے وزیر نوجوت سنگھ سدھو سمیت دیگر سیاسی رہنماؤں نے ری ٹویٹ کیا ۔تاہم اب اس کی اصل حقیقت یہ سامنے آئی کہ اس خاتون کی شناخت ” سریشا راؤ “ کے نام سے ہوئی ہے اور یہ بھارتی فوجی افسر کی ہی بیوی ہے لیکن بھارتی پائلٹ ابھی نندن کی بیوی نہیں ہے ۔اپنی ویڈیو میں بھی خاتون یہ بات واضح کرتی ہے کہ ” میں ایک بھارتی افسر کی بیوی ہوں اور ایک ذمہ دار شہری بھی ہوں اور اس نے پیغا م بھی اسی لیے جاری کیا کیونکہ بھارتی سیاستدانوں کی طرف سے ہمارے جذبات کو ٹھیس پہنچائی گئی ہے ۔“

The post سوشل میڈیا پر پیغام جاری کرنے والی یہ خاتون کیا واقعی بھارتی پائلٹ ابھینندن کی اہلیہ ہیں؟حقیقت سامنے آگئی appeared first on Urdu News.