سندھ ہائیکورٹ نے منی لانڈرنگ سکینڈل میں ملوث آصف علی زرداری کے قریبی ساتھی حسین لوائی اور طحہٰ رضا کی عبوری ضمانت پر رہا کرنے کی استدعا مسترد کردی اور پیشرفت رپورٹ کیلئے ایف آئی اے کو آخری مہلت دیدی ۔ تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں منی لانڈرنگ سکینڈل میں ملوث آصف علی زرداری کے قریبی ساتھی حسین لوائی اور طحہٰ رضا کی عبوری ضمانت پر رہا کرنے کی درخواست کی سماعت ہوئی۔
عدالت نے تفتیشی افسر سے استفسار کیا کہ تحقیقات قومی احتساب بیورو (نیب) کو منتقل ہو رہی ہیں، اس لئے اس مرحلے پر ضمانت نہ دی جائے۔عدالت نے ایف آئی اے کی تفتیشی افسر سے استفسار کیا کہ تفتیش منتقل کرنے کے لیے کتنا وقت درکار ہو گا ؟ تفتیشی افسر نے مو¿قف اختیار کیا کہ چیئرمین نیب کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس میں منظوری دی جا چکی اور ایک ہفتے کے اندر اندر دستاویزات ایف آئی اے سے نیب کو منتقل ہو جائیں گی ۔
ملزمان کے وکیل علی ابڑو نے عدالت سے استدعا کی کہ ایف آئی اے کیس کا حتمی چالان بینکنگ کورٹ میں پیش کرے گی۔ تب تک ملزمان کو ضمانت پر رہا کیا جائے ۔ تفتیشی افسر نے ضمانت دینے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ضمانت دینے سے کیس پر منفی اثرات مرتب ہوں گے، اس لیے ضمانت نہ دی جائے ۔ عدالت نے منی لانڈرنگ تحقیقات ایف آئی اے سے نیب منتقل ہونے پر پیش رفت سے آگاہ کرنے کا حکم دیا دیتے ہوئے آئندہ سماعت پر حتمی چالان اور تحقیقات سے متعلق بھی آگاہ کرنے کی ہدایت کی۔ عدالت نے درخواست ضمانت کی سماعت آٹھ فروری تک ملتوی کر دی۔
The post سندھ ہائیکورٹ نے آصف زرداری کے قریبی ساتھی حسین لوائی کی عبوری ضمانت کی درخواست مسترد کردی appeared first on Urdu News.