لاہور(نیوزڈیسک) سعودی عرب کی جانب سے ایک ارب ڈالر کی امداد بھی مالی خسارے کو کم نہ کرسکی، سعودی عرب سے ملنے والے1 ارب ڈالر خرچ نہیں کیے جاسکیں گے، جس کے باعث اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر میں 20 کروڑ ڈالر کی کمی ہوگئی ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اسٹیٹ بینک کے 16 نومبر تک ملک کے زرمبادلہ ذخائر13ارب71 کروڑ ڈالرکی سطح پر آگئے۔ سعودی عرب سے ایک ارب ڈالر19 نومبرکو موصول ہوئے۔ وصولی کے بعد زرمبادلہ ذخائر14 ارب72 کروڑ ڈالر ہوگئے۔
ذرائع اسٹیٹ بینک کے مطابق سعودی عرب سے ملنے والے1 ارب ڈالر خرچ نہیں کیے جاسکیں گے۔ اسٹیٹ بینک کے زرمبادلہ ذخائر میں 20 کروڑ ڈالر کمی ہوگئی ہے۔ جبکہ مرکزی بینک کے ذخائر7 ارب28 کروڑ ڈالر ہو گئے۔ واضح رہے وزیراعظم عمران خان کے دوست ممالک کے دورے کافی حد تک ملک کی اقتصادی مشکلات دور کرنے میں معاون ثابت ہو رہے ہیں۔ انہوں نے مالی امداد کیلئے سعودی عرب کا دورہ کرکے بیرون ممالک دوروں کی پہل کی۔سعودی عرب سے تقریباً 3ارب ڈالر کا پیکیج حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے۔ چین کے دورے میں بھی تجارتی خسارہ کم کرنے اور دوطرفہ تجارت میں اضافے کے سمجھوتے ہوئے۔
اگرچہ مالیاتی پیکیج کا اعلان نہیں ہوا مگر اس حوالے سے بھی خطیر اعانت کی توقع ظاہر کی گئی ہے۔ اتوار کو عمران خان متحدہ عرب امارات کے دورے پر گئے جہاں ابوظہبی کے ولی عہد اور عرب امارات کی قیادت سے ان کے جامع مذاکرات ہوئے۔ اب وزیراعظم عمران خان ملائیشیاء کا بھی دورہ کرکے وزیراعظم واپس پہنچ گئے۔ دورہ ملائیشیاء کو بھی کامیاب دورہ قرار دیا جارہا ہے۔ دوسری جانب وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ ملاقات میں اب تک ہونے والی پیش رفت حوصلہ افزا ہے۔ حتمی معاملات عام عوام کے مفادات اور حکومت کے وڑن کو مدنظر رکھتے ہوئے طے کیے جائیں گے۔
آئی ایم ایف کے وفد کے دورہ پاکستان کے اختتام پر وزیر خزانہ اسد عمر نے وزیر اعظم عمران خان کو اب تک ہونے والی پیش رفت سے آگاہ کیا۔ اسد عمر نے کہا کہ کوشش ہے کہ دوطرفہ معاملات اس انداز میں طے پائیں کہ معیشت پر ان کے مثبت نتائج مرتب ہوں اور عوام مشکلات کا شکار نہ ہوں۔انہوں نے وزیر اعظم کو بتایا کہ اب تک ہونے والی پیش رفت حوصلہ افزا ہے تاہم، حتمی معاملات عام عوام کے مفادات اور حکومت کے وڑن کو مدنظر رکھتے ہوئے طے کیے جائیں گے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ آئی ایم ایف سے معاملات کاہماری معیشت پر فوری دبائونہیں ہے، وفدکی جانب سے پاکستان کی ترجیحات کا ادراک کرنا حوصلہ افزا ہے۔
The post سعودی عرب کی ایک ارب ڈالرکی امداد بھی مالی بحران کم نہ کرسکی appeared first on Urdu News.