دوبئی(نیوز ڈیسک) متحدہ عرب امارات کے وزیراعظم شیخ محمد بن راشد المکتوم نے نیوزی لینڈ میں مساجد پر حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور اسے مذہبی نفرت کی بنا پر کیا گیا سب سے بڑا اور شدید حملہ قرار دے دیا ہے۔اس حوالے سے انہوں نے ایک ٹویٹ بھی کیا ہے جس میں امیر دبئی شیخ محمد بن راشد المکتوم کا کہنا ہے کہ پرامن جمعہ کے روز،مسجد میں ہم نے مذہبی منافرت کی بنا پر خوفناک حملہ دیکھا جس میں 49 عبادت گزار شہید ہو گئے۔جمعہ مبارک جیسے پرامن دن میں اور عبادت کی جگہ ہم نے ایک ایسے گھنانؤنا جرم ہوتے ہوئے دیکھا جس میں 49 عبادتگزارشہید ہوئے ۔ ہم نے نیوزی لینڈ کی حکومت ، شہید ہونے والوں کے اہل خانہ اور تمام امت مسلمہ سے تعزیت کی ہے میں نے اور میرے ملک نے اس سال کو مذہبی ہم آہنگی کے لئے وقف کیا تھا ۔ہم اس حادثہ پر گہرے دکھ اور غم کا اظہار کرتے ہیں ۔ ہم تمام ممالک سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ مذاہب کے درمیان ہم آہنگی اور روادری کے حوالے سے ہماری تاریخ کا جائزہ لے ۔جب کہ ملائشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیر محمد نے کرائسٹ چرچ مساجد حملوں پر اظہار افسوس کیا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے ملائشین وزیراعظم مہا تیر محمد نے کہا ہے کہ امید ہے نیوزی لینڈ کی حکومت دہشتگردوں کو گرفتار کر کے کاروائی کرے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملائشین حکومت اپنے شہریوں کی حفاظت کے لیے ہر ممکن اقدامات کرے۔اس سے قبل ترک صدر طیب اردگان نے بھی نیوزی لینڈ میں ہونے والے حملے کی شدید مذمت کی ہے اور کہا کہ اللہ متاثرین پر رحم کرے اور زخمیوں کو جلد صحتیاب کرے۔ صدر طیب اردگان نے افسوناک واقعے پر مسلم دنیا سے تعزیت کی اور ٹویٹر پیغام میں کہا کہ میں اپنے ملک کی طرف سے پوری مسلم امہ اور نیوزی لینڈمیں ہونے والے حملے سے متاثرہ لوگوں سے اظہار تعزیت کرتا ہوں۔
ترک صدر نے اسے اسلام فوبیا کا نتیجہ قرار دے دیا۔اس سے قبل ملائشین وزیراعظم مہا تیر محمد نے کہا ہے کہ امید ہے نیوزی لینڈ کی حکومت دہشتگردوں کو گرفتار کر کے کاروائی کرے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ ملائشین حکومت اپنے شہریوں کی حفاظت کے لیے ہر ممکن اقدامات کرے۔اس سے قبل ترک صدر طیب اردگان نے بھی نیوزی لینڈ میں ہونے والے حملے کی شدید مذمت کی ہے اور کہا کہ اللہ متاثرین پر رحم کرے اور زخمیوں کو جلد صحتیاب کرے۔ خیال رہے نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی دو مساجد میں نماز جمعہ میں مسلح افراد کی فائرنگ کے نتیجے میں 49افرادجاں بحق اور60سے زائد زخمی ہوگئے ، ایک حملہ آور کو گرفتار کر لیا گیا ۔ تین منٹ تک مسجد میںفائرنگ کرنے کے بعد حملہ آور مرکزی دروازے سے باہر نکلا،جہاں اس نے گاڑیوں پر بھیفائرنگ شروع کر دی۔حملہ آور جدید ہتھیاروں سے لیس اور پیٹرول بموں سے بھری گاڑی کیساتھ پہنچا تھا،جو ہیلمٹ میں لگے کیمرے سے واردات کی ویڈیو لائیو اسٹریمنگ کرتارہا۔فائرنگ کی اطلاع ملتے ہیپولیس نے علاقہ اپنے گھیرے میں لے لیا اور مکینوں کو بھی گھروں سے نہ نکلنے جبکہ کسی بھی مشتبہ سرگرمی کی اطلاع فوراً پولیس کو دینے کی بھی ہدایت کی گئی ہے، ملزم نے اپنی شناخت آسٹریلوی شہری برینٹن ٹیرینٹ کے نام سے کی ہے،حملہ آور وردی میں ملبوس تھا،جس کی عمر 30 سے 40 سال تھی۔ فائرنگ کی اطلاع ملتے ہیپولیس نے علاقہ اپنے گھیرے میں لے لیا اور مکینوں کو بھی گھروں سے نہ نکلنے جبکہ کسی بھی مشتبہ سرگرمی کی اطلاع فوراً پولیس کو دینے کی بھی ہدایت کی گئی ہے، ملزم نے اپنی شناخت آسٹریلوی شہری برینٹن ٹیرینٹ کے نام سے کی ہے،حملہ آور وردی میں ملبوس تھا،جس کی عمر 30 سے 40 سال تھی۔
The post جو کام کوئی نہ کر سکا وہ ’مہاتیر محمد ‘ اور ’ شیخ محمد بن راشد المکتوم ‘ نے کر دکھایا۔۔۔۔ سانحہ نیوزی لینڈ پر اب تک کا سب سے بڑا اعلان کر دیا appeared first on Urdu News.