شارلیروا، بلجئیم کی ایک کمپنی کو تیز رفتاری کی وجہ سے 1 لاکھ 92 ہزار یورو (تقریباً 3 کروڑروپے) جرمانہ کیا گیا ہے۔ اس کمپنی ، جس کا نام ظاہر نہیں کیا گیا، کا ایک ملازم 50 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار کے علاقے میں 70 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گاڑی چلا رہا تھا۔ تیز رفتاری کی وجہ سے یہ گاڑی سپیڈ کیمرہ کی نظروں میں آگئی۔ اس کمپنی کو تیز رفتاری کی وجہ سے 200 یورو سے 4000 یورو تک جرمانہ یا 15 دن سے 6 ماہ تک سزا ہو سکتی تھی۔
چونکہ یہ کمپنی کی گاڑی تھی، اس لیے حکام نے ڈرائیور کی شناخت ظاہر کرنے کے لیےکمپنی کو 15 دن دئیے۔ کمپنی نے سستی کا مظاہرہ کرتے ہوئے یہ وقت گزار دیا۔ اس وجہ سے جرمانے کو سزا میں بدلا گیا اور رقم میں کئی گنا اضافہ کر دیا گیا۔ بدقسمتی سے یہ کمپنی پہلی بار ایسی سستی کا مظاہرہ نہیں کر رہی تھی۔ اسی وجہ سے پولیس کورٹ رقم میں مزید کئی گنا اضافہ کر دیا۔
پولیس کورٹ نے کمپنی کو 1 لاکھ 44 ہزار یورو جرمانہ کیا ہے۔ کمپنی کے باس کو 12 ماہ کی مشروط قید اور 48 ہزار یورو جرمانہ کیا گیا ہے۔ کمپنی کے وکیل نے اس جرمانے کےخلاف اپیل کی تو کمپنی کا جرمانہ 24 ہزار ڈالر اور باس کا جرمانہ 8 ہزار ڈالر کم ہوگیا ہے ۔ اس طرح کمپنی کو اب 1 لاکھ 60 ہزار یورو ادا کرنے ہونگے۔
The post تیز رفتاری سے گاڑی چلانے پر3 کروڑ روپے جرمانہ appeared first on Urdu News.