لندن (ویب ڈیسک) برطانیہ میں ایک شہری نے تیز رفتاری پر چالان سے بچنے کیلئے اپنی بی ایم ڈبلیو کار میں جیمنگ ڈیوائس نصب کرلی۔ اس طریقے سے کچھ عرصہ تو وہ چالان سے بچتا رہا لیکن آخر کار قانون کے لمبے ہاتھ اس کی گردن تک پہنچ گئے ۔ عدالت نے مذکورہ شخص کو تین ماہ جیل کی سزا کے ساتھ 1500 پاؤنڈ (تقریباً پونے 3 لاکھ روپے) کا جرمانہ
بھی عائد کیا ہے۔برطانوی شہر یارک شائر سے تعلق رکھنے والے 58 سالہ کاروباری شخص مائیکل ٹویزل نے اپنی بی ایم ڈبلیو کار میں لیز جیمنگ ڈیوائس نصب کر رکھی تھی۔ اس ڈیوائس کی مدد سے وہ سڑک پر لگے سپیڈ چیکنگ کیمروں کو چکمہ دے کر انتہائی تیز رفتاری سے بچ کر نکل جاتا تھا۔گزشتہ برس فروری میں مذکورہ شخص اس وقت پکڑا گیا جب اس کی گاڑی قریب آنے پر پولیس کے کیمرے میں فنی خرابی پیدا ہوئی۔ ٹریفک سارجنٹ نے عدالت میں مقدمے کی سماعت کے دوران بتایا کہ اس طرح کی ڈیوائسز کا استعمال غیر قانونی ہے جس پر ملزم کو جیل میں بھی ڈالا جاسکتا ہے۔ عدالت نے مقدمے کی سماعت کے بعد ملزم کو تین ماہ قید اور 1500 پاؤنڈ جرمانے کی سزا سنادی۔اس سے قبل بھی برطانیہ میں اسی قسم کی حرکت کرنے پر ایک شخص کو 8 ماہ قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ ادھیڑ عمر شخص ٹموتھی ہل کو اس بات پر سزا سنائی گئی تھی کہ اس نے سپیڈ چیکنگ کے تین کیمروں کی جانب نازیبا اشارے کیے تھے۔
The post آدمی نےاوور سپیڈنگ پر چالان سے بچنے کیلئے بی ایم ڈبلیو میں ایسی ڈیوائس لگالی کہ پولیس کے کیمرے ہی فیل ہوگئے appeared first on Urdu News.