امریکی سفارتخانہ یروشلم منتقل کرنے کا معاملہ ، فلسطین نے امریکی اقدام کو عالمی عدالت انصاف میں چیلنج کر دیا

فلسطین نے امریکا کی جانب سے یروشلم میں سفارتخانہ کھولنے کے معاملے کو عالمی عدالت میں چیلنج کرتے ہوئے امریکا کے اس اقدام کو غیرقانونی اور ویانا کنونشن کی خلاف ورزی قرار دیا ہے ۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا کہ فلسطین مانتا ہے کہ سفارتخانے کی منتقلی سفارتی تعلقات کے حوالے سے ویانا کنونشن کی کھلی خلاف ورزی ہے ۔
فلسطین نے اپنی درخواست میں اعتراض اٹھایا ہے کہ اگر امریکا نے سفارتخانہ منتقل کرنے کے لیے طے کردہ عالمی قوانین کی صریح خلاف ورزی کی ۔ فلسطین نے عالمی عدالت سے مطالبہ کیا کہ وہ امریکا کے اس اقدام کو غیرقانونی قرار دینے کے ساتھ ساتھ انہیں حکم دے کہ وہ مقبوضہ بیت المقدس میں سفارتخانے کے قیام سے دستبردار ہو جائے ۔
فلسطینی وزیر خارجہ ریاض الملکی نے اپنے بیان میں کہا کہ یہ شکایت فلسطینی ریاست کی پالیسی کے عین مطابق ہے جس کا مقصد یروشلم جیسے مقدس شہر کو اس کی منفرد روحانی ، مذہبی اور ثقافتی اقدار کے مطابق محفوظ بنانا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے لوگ اپنے حقوق کا دفاع کرتے ہیں اور بغیر کسی ہچکچاہٹ کے ہر قسم کی سیاسی اور مالی دباو کو مسترد کرتے ہیں ۔ یہ تاریخ میں پہلا موقع ہے کہ فلسطین نے امریکا کے خلاف عالمی عدالت میں کوئی مقدمہ کیا ہے ۔
The post امریکی سفارتخانہ یروشلم منتقل کرنے کا معاملہ ، فلسطین نے امریکی اقدام کو عالمی عدالت انصاف میں چیلنج کر دیا appeared first on Urdu News.