انقرہ (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی پادری کی گرفتاری سے ترکی کے لئے پیدا ہونے والی مشکلات میں ابھی کمی نہیں آئی تھی کہ اب ایک جرمن شہری کی ترکی میں گرفتاری نے یورپی ملک کو بھی سیخ پا کر دیا ہے۔ غیر ملکی خبر ایجنسی روئٹرز کے مطابق جرمن وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ گرفتار کئے گئے جرمن باشندے پر دہشتگردی سے متعلقہ پراپیگنڈا کرنے کا الزام لگایا گیا ہے۔ یہ گرفتاری ایک ایسے موقع پر سامنے آئی ہے جب محض ایک دن قبل جرمن وزیر خارجہ ہائیکوماس نے ترکی پر زوردیا تھا کہ وہ جرمنی اور امریکہ کے ساتھ اپنے تعلقات بہتر بنائے، جس کے نتیجے میں اس کی معاشی مشکلات میں بھی کمی آسکتی ہے۔
جرمن وزارت خارجہ کے ترجمان نے بتایا کہ ترکی میں اس وقت آٹھ ایسے افراد قید میں ہیں جن کی گرفتاری سیاسی الزامات کے تحت کی گئی۔ حالیہ چند ماہ کے دوران ترکی نے متعدد امریکی شہریوں کو بھی گرفتار کیا ہے ۔ تازہ ترین گرفتار کئے گئے شخص کا نام الحامی اے بتایا گیا ہے جو 1992 سے جرمنی میں مقیم ہے۔ کرد نسل کا یہ ترک نژاد باشندہ جرمنی کے شمالی شہر ہیمبرگ میں ٹیکسی ڈرائیونگ کرتا ہے۔