اسلام آباد(آئی این پی) سینیٹ میں حکومت نے اسرائیل کو تسلیم کرنے کے حوالے سے رپورٹس کو مستردکرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ اسرائیل پاکستان کا دشمن ہے، اسرائیل کو تسلیم کرنا اور دوستی کرنے کی آئین اور دین اجازت نہیں دیتے، اسرائیل سے دوستی کرنے والے کو دریا برد کر دیں گے،ہم نے مل کر بھارت اور اسرائیل کے گٹھ جوڑ سے پاکستان پر حملے کو ناکام بنایا ہے۔ جمعرات کو سینیٹر مشتاق احمد کے عوامی اہمیت کے معاملہ پر اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے کہا کہ اسرائیل پاکستان کا دشمن ملک ہے، ماضی میں کسی حکومت نے اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا اور نہ ہی اب کوئی ایسا کر سکتا ہے،پاکستانی حکومت اسرائیل کو تسلیم کرنے کا نہیں سوچ رہی۔
انہوں نے کہا کہ اسرائیل کو تسلیم کرنا اور دوستی کرنے کی آئین اور دین اجازت نہیں دیتے، اسرائیل سے دوستی کرنے والے کو دریائے سندھ میں دریا برد کر دیں گے،جو بندہ اسرائیل سے دوستی کی بات کریگا عوام حکومت اس کے پرخچے اڑا دینگے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل کا وزیراعظم کہتا ہے کہ پاکستان کو فکری اور عسکری طور پر ابھرنے نہیں دینا، ہندوستان ان کا دوست ہے۔ ہم نے مل کر بھارت اور اسرائیل کے گٹھ جوڑ سے پاکستان پر حملے کو ناکام بنایا ہے۔ اسرائیل کو کسی صورت تسلیم نہیں کریں گے، اس معاملے پر قوم کو تقسیم نہ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ کوئی بھی پاکستانی حکومت اسرائیل کو تسلیم نہیں کرسکتی،میڈیا،اپوزیشن اسرائیل کو تسلیم نہ کرنے پر قومی اتحاد کو تقسیم نہ کرے۔
The post اسرائیل کو بطور دوست ملک قبول کیا جائے گا یا نہیں پاک بھارت کشیدگی کے بعد تحریک انصاف حکومت نے بڑا اعلان کردیا appeared first on Urdu News.